شرائط علاج

۱ شفا منجانب اللہ ہے چاہے کسی کے پاس کتنی ہی طاقت کیوں نہ ہو ۲ اگر جادو پرانا نہ ہو تواس سے پیدا شدہ مسائل بھی جادو ختم ہو جائے تو ساتھ ہی ختم ہو جاتے ہیں ان صورتوں میں ہم صرف جادو جنات کے اثرات کو ختم کرنے کے ذمہ دار ہیں ۳ جب ساتھ طبی مرض بھی ہواس صورت میں ساتھ طبی علاج ضروری ہے ۴ عورت کی عمر اولاد پیدا کرنے کی نہ رہی ہویا مرد میں طبی نقص بھی ہےکئی دفعہ میاں بیوی طبی اور روحانی علاج سے مکمل ٹھیک ہو جائیں تو بھی اولاد نہ ہو تو یہ اللہ کے اختیار میں ہے ۵ جادو سے شادی یا طلاق ہو چکی ہو;.

تشخیص

ہمارا کام کرنے کا طریقہ یہ ہے کہ سب سے پہلے مریض کی بذریعہ نام تشخیص کی جاتی ہے کے اس کے مسلے یا بیماری کی اصل وجہ کیا ہے ؟

مستقل علاج

جب یہ بات مکمل واضع ہو جاتی ہے مریض کو جادو جنات کا اثر ہے تو قرآن پاک کی آیات کی روشنی میں اسکے علاج کا عمل اسکے نام پر ہی کیا جاتا علاج کے لیےمریض کا سامنے موجود ہونا لازمی نہیں وہ کہیں بھی ہو کسی بھی حال میں ہو علاج ممکن ہے.

حفاظتی دائرہ یا حصار

جب مستقل علاج کا عمل کیا جاتا ہے تو ساتھ ہی مریض کو اگلے پانچ سال کے لیے ہر قسم کے جادو سے تحفظ کے لیے حفاظتی دائرہ لگا دیا جاتاہے تاکہ مریض کو دوبارہ مخالف کے جادو سے بچایا جا سکے اس کا فائدہ یہ ہوتا ہے.

5 روزہ مفت علاج

تشخیص کرتے وقت ہی مریض کی تسلی کے لیے پانچ دن کے لیے از خوداس کے جادو جنات کےاثرات کو روک دیا جاتا ہے تاکہ مریض ہماری سروس کو اچھی طرح جانچ سکے کےہمارا دعوا کتنا سچا ہے مریض کو پہلے ہی دن میں ذہنی جسمانی سکون محسوس ہوناشروع ہو جاتا ہے

Monday, 30 October 2017

data Pooicy

Share:

Saturday, 21 October 2017

zehni amraaz! depration aur tension ki wajohaat aur ilaaj


ذہنی امراض؟. طبی یا قدرتی وجوہات کی بنا پر یہ بیماری ہو تو طبی یا غذائی علاج سے بہتری آ جاتی ہے لیکن کئی دفعہ مخالف ایسا جادو کروا دیتا ہے کے بندہ ہر وقت دماغی طور پر پریشان رہتا ہے کوئی مثبت فیصلہ نہیں کر پاتا یاداشت کمزور ہو جاتی ہے ایک ہی کام کو کئی بار دہرانے کی عادت ہو جاتی ہے اکثر چپ رہنا تنہا رہنا اسکا معمول بن جاتا ہےکئی بار ساتھ نظر بھی کمزور ہو جاتی ہے اور کبھی کبھی سر کے بال گرنا شروع ہو جاتے ہیں جب کوئی کام کرنے کی کوشش کرتا ہے سر بھاری ہو جاتا ہے یا سر چکرانا شروع ہو جاتا ہے طبیعت میں چڑچڑا پن آجاتا ہے اور ڈاکٹر اسے ٹینشن کا مریض قرار دےکر نشہ آور ادویات دے دیتے ہے اور ریسٹ کرنے کا کہ دیتے ہیں جوکے مکمل علاج نہیں کئی دفعہ جادو اتنا سخت کیا جاتا ہے کہ مریض ذہنی توازن کھو بیٹھتا ہے اسکی کفیت نیم پاگل جیسی ہو جاتی ہے اتنا غصہ آتا کہ نہ اپنے نقصان کا شعور رہتا نہ کسی دوسرے کا بلا مقصد ہر وقت بولتے رہنا شور کرنا ادھر ادھر بھاگنا جب پکڑنے کی کوشش کرنا اتنا زور آجاناکہ کئی لوگ مل کر پکڑیں تو قابو نہ کر سکیں اکثر دیکھنے میں آیا ہے کہ ایسے مریض کئی بار خود کشی کرنے کی کوشش کرتے ہیں بعض دفعہ تو جان سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں ایسی کفیت ہو تو کسی اچھےروحانی معالج سے مشورہ ضرورکریں
ذہنی امراض! ڈپریشن اور ٹنشین کی وجوہات اور علاج
Share:

Friday, 6 October 2017

جنات کی علامات

جنات کی علامات
 جنات کی علامات کے ذکر سے پہلے ایک نظریہ درست کر لینا چاہیے کہ کچھ لوگو ں کا کہنا ہے جنات کا انسان پر اثر انداز ہونا صرف وہم ہے اور جو کوئی کہتا ہے کے مجھے جنات کا سایہ ہے وہ صرف ڈرامہ کرتا ہے اسے نفسیاتی یا طبی مرض ہے کچھ مریضوں کو ایسا معاملہ بھی ہو سکتا ہے لیکن ہر بندہ ہی نفسیاتی یا طبی مریض ہے یہ نظریہ درست نہیں  کچھ عامل حضرات بھی یہی نظر یہ رکھتے ہیں  کیوں کے ان کو  کامل علم نہیں ہوتا تو وہ مریض کا علاج کرنا تو بعد کی بات ہے مریض کو غلط راہنمائی کرکے مزید پریشانی میں ڈال دیتے ہیں  یہاں پر میں ان لوگوں سے سوال کرتا ہوں جو کہتے ہیں جنات  کا  اثر انداز ہونا سب جھوٹ کہانی ہے جب  کسی بھی ٹیسٹ میں مرض نہیں ملتی  پھر بھی مریض بیمار کیوں ہے جب ٹیسٹ میں کوئی مرض نہیں ملی تو ڈاکٹر دوا کس چیز کی دے رہا ہے   ڈاکٹر آخر میں بتا  دیتے ہیں کے مریض کو وہم ہے یا کوئی دماغی دباو ہے آج کے دور میں کس کو ٹییشن نہیں ہے باقی لوگ ٹینشن کےہوتے ہوےبھی کیوں تندرست ہیں جس مریض کو نہ کوئی حادثہ نہ کوئی صدمہ پیش آیا  تو اسے یہ بتانا لاعلمی کے سوا کچھ نہیں لہذا جس طرح میڈیکل ٹیسٹ کے بعد ہی طبی مرض کا پتہ چلتا ہے ویسے کامل روحانی معالج ہی نہ معلوم امراض کی تشخیص وعلاج کر سکتاہے   جنات کی علامات 
() اچانک خوشبویا بدبو آنا۔بھی جنات کی علامت ہوسکتی ہے
 (۲) جس مریض پر جنات کااثرہواسکےسر، کندھےاور گُدی پر اکثر وزن رہتا ہے۔
 (۳)  جس پر جنات کاسایہ ہواسےچلتے پھرتے اکثر اوقات یوں محسوس ہوتاہےجیسے میرے پیچھے پیچھے کوئی آرہا ہے ۔ حتی کہ یہ خیال اتناپختہ ہوجاتاہےکہ اسےکئی بار پلٹ کر دیکھنا پڑتا ہے۔ مگر دیکھنے پرپیچھے  کچھ نظر نہی آتا  
(۳) جنات خواب میں خوفناک شکلوں میں بھی دکھائی دیتےہیں یا براہ راست جنات یا چڑیلوں وغیرہ کا نظر آنا۔یہ تو واضح جنات کی علامت ہے
 (۶) جس گھر میں جنات ہوں توایسی جگہ سے چیزوں، نقدی، زیورات وغیرہ کا چوری اور غائب ہوجانا، ممکن ہےجہاں آپ کے سوا کسی کا گذر اور رسائی ممکن نہ ہو۔ اگر کوئی چیز ایسی جگہ سے گم ہوتی ہے جہاں گھر کے اور لوگ بھی یاملازم وغیرہ بھی آجا سکتے ہیں توپھر جنات کا وہم کرنے کی بجائے تفتیش کرلیں۔ گھرکےکسی حصے میں آتے جاتے وقت  جسم کا وزنی ہوجانا یا سردی کی لہرجسم میں دوڑجانا یا بلا وجہ خوف طاری ہوجانابھی جنات کی علامت ہے ۔جنات کی موجودگی ایک علامت سیٹرھیوں وغیرہ میں کسی نادیدہ فرد کے چڑھنے اتر نے کا احساس ہونا بھی ہے۔
 (۹) کئی دفعہ جنات جب ڈرانا یا شرارت کرناچاہتے ہیں تو ایسا لگتا ہےجیسے چھت  پر کوئی دوڑ رہا ہے یا چار پائیاں گھسیٹ رہا ہے  
 (۱۰) رات پچھلے پہر میں یوں لگنا جیسے کچن میں سالن پک رہا ہے۔ کبھی یہ احساس سالن کی خوشبو آنے سے ہوتاہے، یوں لگتا ہے جیسے کوئی ہنڈیا بھون رہا ہے۔ اور کبھی سالن پکا نے کے دوران برتنوں کے کھنکنے کی جو آوازیں اٹھتی ہیں، ویسی آوازیں آنا شروع ہوجاتی ہیں یہ بھی جنات کی شرارتیں ہوتی ہیں
 (۱۱) جس گھر مین جنا ت ہوں وہاں کئی بارایسا لگتاہےکہ ابھی سامنے سے کوئی گذر ا ہے یا کوئی شخص کھڑکی یا پردے کے پیچھے سے جھانک رہاہے۔ 
(۱۲) گھر کی دیوار وں ،چھت ، فرش، صوفوں ، یا اہل خانہ کے کپڑوں پر خون کے چھینٹے پڑنا۔جنات اورجادو دونوں وجوہات سے ہوسکتا ہے
 (۱۳) جہاں جنات رہتے ہوں وہاں ایسا ہوسکتاہےکہ الماریوں میں صحیح سالم کپٹرے رکھنے کے بعد نکالتے وقت دیکھا کہ ان پر کٹ لگے ہوئے ہیں یا وہ کہیں کہیں سے جلے ہوئے ہیں اور جلنے سے ان میں سوراخ ہوگئے ہیں۔ (یہ علامت بعض دفعہ جادو سے ہوتی ہے )۔ 
(۱۴) سایہ جنات کےمریض کو یا عام انسان کا ایسی جگہ جہاں جنات رہتے ہوں سوتے وقت اچانک پورے بدن کا منجمد اور بے حس وحرکت ہو جانا۔ حتی کہ کچھ پڑھنا چاہے تو پڑھ نہ سکے اور چیخنا چلانا چاہے تو چیخ بھی منہ سے نہ نکل سکے ۔ پھر اسی تگ ودوکے دوران اچانک پورے بدن کا کھل جانا اور حرکت میں آجانا ایسی کفیت کا سامناہو سکتا ہے۔
 (۵) جنات کے زیراثر مریض کواکثر خواب میں کتا، بھیڑیا، بندر، ریچھ یا شیر نظر آتا ہے 
 (۱۵) سوتے وقت اچانک پورے بدن پر منوں وزن پڑجانا ۔ یا جسم کے کسی ایک آدھ حصے کا نہایت وزنی ہوجانا ۔ بعض دفعہ سونے سے پہلے جاگتے ہوئے بھی بستر پر لیٹنے کے بعد یہ کیفیت طاری ہوجاتی ہے۔یہ کفیت  سایہ جنات کے   مریض کو پیش آسکتی ہے  (۱۶) سایہ جنات کے مریض کو ایسے لگتاہےجیسے سوتے میں کسی نےہاتھ یا پاؤں کو جھٹکا دے کر جگادیا ہو ۔ 
(۱۷) اپنے نام کی آواز سننا ۔ لیکن جسس شخص کی آوازمیں پکار اگیاہے وہ یا تو سرے سے گھر پہ موجود ہی نہیں یا وہ گہر ی نیندسورہا ہے۔یہ بھی جنات کی شرارت ہوتی ہے 
(۱۸) کبھی کبھی سایہ جنات کی مرض والی خواتین کو یوں محسوس ہوتاہےجیسے کسی بلی یااس جتنے کسی جانورنے اچانک اس کے پیٹ پر چھلا نگ ماردی ہے۔
 (۱۹) جن لوگوں کےگھر میں جنات ہوں ان کو اس کفیت کا سامنا بھی ہو سکتا ہےگھرکےافراد کو معمولی باتوں پر بلا وجہ اور حدسے زیادہ غصہ آجانا ۔ اور غصہکی حالت میں خاص طور پر آنکھوں کا سرخ ہوجانا ۔ 
(۲۰) بیوی کو خاوند سے بلا وجہ حدسے زیادہ نفرت ہونا، خاوند کو قریب نہ پھٹکنے دینا ۔ ویسے خاوند کے ساتھ تعلق صحیح ہولیکن اس کے قریب جانے پر آمادہ نہ ہونا ۔ ایسی خواتین کو بعض دفعہ جاگتے ہوئے بھی محسوس ہوتا ہے کہ ان کے بستر پر ان کے علاوہ کوئی اور بھی موجود ہے۔ اور بعض دفعہ خواب میں ایسی صورت حال دیکھتی ہیں جو کسی سے بیان بھی نہیں کرسکیں اور جسے دیکھ کر آسانی سے یہ سمجھا جاسکتا ہے کہ وہ خاوند کو قریب کیوں نہیں پھٹکنے دیتیں، یہ حرکت وہ خود نہیں کرتیں بلکہ غیر اختیاری طورپر خبیث اور بدکردار قسم کے شیاطین جن زبردستی ان سے یہ حرکت کرواتے ہیں۔ 
۲۱گھر میں رہیں تو بیمار باہر کسی اور جگہ ہوں تو ٹھیک یہ آسیب زدہ جگہ کی علامت ہےایسی جگہ میں اگر مویشی وغیرہ ہوں تو وہ بھی بیمار رہتے ہیں اور سوکھ کر کمزور ہو جاتے ہیں 
۲۲مکان کی چھت کے اکثرکھڑکھڑانے کی آواز آناجنات کی موجودگی کی علامت ہے 
۲۳دورے پڑنا بےہوش ہونا یا مریض میں اتنازور آجانا کی کئی لوگ مل کر بھی اس کو قابو نہ کر سکیں ایسا اس وقت ہوتا جب مریض پر جنات سوار ہوتے ہیں  
۲۴اولاد کا پیدا نہ ہونا جبکہ کوئی میڈیکل بیماری بھی نہیں یا پیداہوتے  ہی مر جانا یا پیٹ میں مر جانا بھی جنات کی وجہ ہو سکتی ہے
 ۲۵گھر کی چیزیں رات کو کہیں رکہنا اور صبح کہیں اور ملنا جب کہ کسی نے خود آگے پیچھے نہ کی ہوں ایسی شرارتیں جنات گھر والوں کو پریشان کرنے کے لیے کر دیتے ہیں 
۲۶جن بچوں پر جنات کا اثر ہو جاتا ہےان کو اکثر بلاوجہ چوٹیں لگنا اور بلا وجہ حد سے ذیادہ ضد کرنا ایسی کفیت کا سامنا ہو سکتا ہے ۲۷ گھر سے بلاوجہ خوف آنا اداسی چھائی رہنا دل نہ لگنا آسیب زدہ جگہ کی علامت ہو سکتی ہی  ۲۹عجیب طرح کے وسواس آنا نماذ روذے عبادات کی ادائیگی کرتے وقت جسم وزنی ہو جانا جمائیاں آنا آنکھوں میں پانی آجانا جنات کے زیر اثر مریضوں کےساتھ اکثر ہوتاہے مریض کا عجیب طرح کے دعوے کرنا جیسے پاگل ہو گیا اونچی آواز میں شور کرنا  حالانکہ میڈیکل ٹیسٹ میں نارمل ہونا  ایسا تب  ہوتا ہے جنات مریض میں حاضر ہوں 
۳۰ اکثر بیمار رہنا ادویات کا اثر نہ کرنا کسی میڈیکل ٹیسٹ میں مرض نہ آنا ایسا بھی دیکھنے میں آیا ہے  کہ گھرہوں تو بیمار گھر سے باہر ہو ں تو تندرست  ایساتب ہوتاہے جب جگہ آسیب زدہ ہویہ علامت جادوکی بھی ہوتی ہے اور قدرتی مرض بھی ہو سکتی ہے
Share:

Saturday, 23 September 2017

Wednesday, 20 September 2017

ا ٹھر اہ کا مرض

ا ٹھر اہ کا مرض

خواتین کے لئے ایک نہایت تکلیف دہ اور پریشان کن مرض ہے۔ اس میں بعض اوقات بچے پیٹ میں ہی مرجاتے ہیں ۔بعض دفعہ چوتھے پانچوں مہینے حمل ساقط ہوجاتا ہے۔ بعض دفعہ پیدا ہونے کے بعد پہلے یا چھٹے مہینے فوت ہوجاتے ہیں ۔ پیدا ہوکر مر نے والے بچے عام طورپر آخر میں سبز رنگ کے دست کرتے ہوئے جان ہار جاتے ہیں اور آخر میں ان کا رنگ بھی سبز پڑجاتاہے ۔ بعض خواتین کو اس طرح کا اٹھر اہ ہوتا ہے کہ حمل لڑکے کا ہو تو ساقط ہوجائے گا اور لڑکی کا ہوتو پرو ان بھی چڑھے گا اور بچی بھی نارمل حالت میں پیدا ہوگی ۔ بعض کا اس کے برعکس ہوتا ہے ۔
کئی دفعہ بچہ تو پیدا ہو جاتا ہے لیکن بچہ اکثر بیمار رہتا ہے اور اسکا وزن کم ہوتا  جاتا ہے اکثر دست لگے رہنا جسم میں حرارت
رہتی ہے جیسے بخار ہو اور بچہ اکثر روتا
اور ڈرتا ہے جسم کو ایسا لگتا ہے جیساکسی نے پکڑ کر جھٹکا دیا ہو یا ماں اور بچہ دونوں بیمار ہوتے ہیں
عورتوں میں اٹھراہ کی چند عام علامات
جسم پر نیل پڑجانا
ماہواری خراب رہنا
جسم میں سستی کمر میں درد
ہاتھوں کا سو جانا
سر کا سو جانا
برے برے خواب آنا
اولاد کا پیدا نہ ہونا جبک طبی طور پر میاں بیوی ٹھیک ہیں اگر کسی عورت کو یہ علامات ہیں تو اسے کسی کامل روحانی معالج سی اپنی تشخیص کروالینی چاہیے روحانی علاج کے بعد طبی علاج بھی فائدہ دے گا جو ادویات پہلے اثر نہیں کرتی تھیں اب مکمل فائدہ کریں گی یہ مرض اکثر اٹھراہ زدہ عورت سے دوسری عورت یا بچے کو منتقل ہو جاتا ہے
کہتے ہیں کہ اٹھراہ آٹھ قسم کا ہے ( واللہ اعلم )کوئی مخالف جادو سے بھی یہ مسائل پیدا کرسکتا ہےاور جنات کےاثر سے بھی یہ تکلیف ہو سکتی ہے اور بعض اوقات طبی اور قدرتی وجوہات بھی اس مرض کا باعث بن سکتی ہی لیکن اصل وجہ کامل معالج ہی بتا سکتا ہے                         
Share:

Sunday, 17 September 2017

شرائط علاج

شرائط علاج 

۱ شفا منجانب اللہ ہے چاہے کسی کے پاس کتنی ہی طاقت کیوں نہ ہو
۲ اگر جادو پرانا نہ ہو تواس سے پیدا شدہ مسائل بھی جادو ختم ہو جائے تو ساتھ ہی ختم ہو جاتے ہیں      ان صورتوں میں ہم صرف جادو جنات کے اثرات کو ختم کرنے کے ذمہ دار ہیں
۳ جب ساتھ طبی مرض بھی ہواس صورت میں ساتھ طبی علاج ضروری ہے
۴ عورت کی عمر اولاد پیدا کرنے کی نہ رہی ہویا مرد میں طبی نقص بھی ہےکئی دفعہ میاں بیوی طبی اور روحانی علاج سے مکمل ٹھیک ہو جائیں تو بھی اولاد نہ ہو تو یہ اللہ کے اختیار میں ہے 
۵ جادو سے شادی یا طلاق ہو چکی ہو
۶ جادو جنات سے کوئی مالی نقصان ہو چکا ہو ہاں علاج کے بعد آئندہ نہیں ہو گا
۷ شادی کی عمر نہ رہی ہو یا عمر تو ہے ساتھ کوئی اور وجوہات بھی ہوں
۸ مریض پیدائشی گونکا بہرہ اندھا 
 ذہنی امراض کا شکار یا اپاہج ہے
۹ انسان مرض موت میں مبتلا ہے
۱۰ کوئی ایسا نقصان جسے پورا کرنا انسانی طاقت سے باہر ہو
۱۱ علاج کا عمل نوری علم سے مریض کے نام پر کیا جاتا ہے تعویز دھا گہ وغیرہ نہیں دیا جاتا
۱۲ جھگڑا جادو کے علاوہ گھریلو مسائل کی وجہ سے بھی ہو یا متعلقہ شخص سخت اور وہمی بھی ہو
۱۳ جادو سے طابع ہو نے کے علاوہ بھی متعلقہ فرد خود بھی جس نے اپنے تابع کرنے کو جادو کروایا اس سے دلچسی رکھتا ہو
۴۱ کاوربار ختم ہوچکا اب سرمایہ نہیں یا اور جو کاروباری اصول اور ضرورتیں ہوتی  ہیں وہ پورے نہیں.
 (نوٹ )ہرمریض کے علاج کی فیس مختلف ہو سکتی ہے جو کہ مرض کے مطابق ہو گی 
Share:

General Help
+923357764997
+923457818315

Featured post

ہمارے متعلق شفا ء علی آن لائین تشخیص و علاج

ہمارے متعلق شفا ء علی آن لائین تشخیص و علاج کی سروس  لوگو ں کے مسائل اور وقت کی ضرورت کے تحت شروع کی گئی دور درازکے  اور ایسے لوگ جو ...

Music

View All

Games

View All

Pictures

View All

Slider

Flickr Images

Contact Form

Name

Email *

Message *

Video

Latest News

Fashion

View All

Technology

View All

728x90 AdSpace

Label

Text

Find Us On Facebook

Link List

Blogroll

Ads